pic
pic

سوال و جواب

اپنا سوال پوچھیں
امام اور شہداء کے قبور کا شبیہ بنانا
تاریخ 22 October 2017 & ٹائم 13:26

السلام علیکم
جناب آپ کے جوابات کا شکریہ ! جناب یہ فرمائے گا کہ کیا امام بارگاہ میں امام اور شہداء کربلا کے قبور کی شبیہ بنانا اور اس پر ضریح بنانا جائز ہے ، ہاں یا نہ دونوں صورتوں میں کوئی آیت یا حدیث سے ریفرنس دے دیجئے گا ، آپ کی جلدی جواب کا منتظر رہوں گا ، فقط والسلام

بسمه تعالی

سلام علیکم

امام بارگاہوں میں ائمہ اطہار علیہم السلام کا قبور بنانااورپھر اس پر ضریح بنانا اگر خرافات کا سبب ہوتا ہو یا کچھ عرصہ گزرنے کے بعد لوگاسے امام کے واقعی قبر تصور کرنے لگے یا یہ جو افراد امام بارگاہ میں آتے ہیں انکے لئے رکاوٹ کا سبب ہو یا کسی اور مفسدہ کا سبب ہو تو جائز نہیں ہے ، اور اس کےحرام ہونے کو ثابت کرنے کے لئے کسی آیت یا روایت کی بھی ضرورت نہں ہے ۔ہر وہ کامجو بدعت ہو یا دین میں خرافات کا سبب ہو وہ جائز نہیں ہے، جی ہاں اگر جس دنعزاداری کرنی ہو اسی دن امام کےیا شہدا کے قبر کا شبیہ بنائے اور عزاداری ختم ہونےکے بعد اسے اٹھا لیں اور اس میں کوئي مفسدہ بھی نہ ہو تو اس میں کوئي اشکال نہیںہے۔

۹۸۸ قارئين کی تعداد:

مطلوبہ الفاظ: