pic
pic

افغانستان کے شہر قندوز کے سید آباد جامع مسجد میں شیعوں کے افسوسناک شہادت پر حضرت آیت اللہ فاضل لنکرانی کے بیانات

مزید

ہمارے دینی اور تاریخی مہمترین مسئلہ غدیر ہے ، اگر ہم اپنے دینی منابع قرآن کریم سے لے کر سنت رسول خدا اور آئمہ طاہرین(علیہم السلام) میں جستجو کریں تو ولایت سے مہم کوئي...

مزید

یہ الیکشن انقلاب کا ایک درخشان چہرہ تھا ، جو دشمنوں کے ناکامی اور ملت ایران اور اس انقلاب کے تمام چاہنے والوں کے دلوں میں امید پیدا ہونے کا سبب بنا

مزید
حضرت آيت اللہ فاضل لنکرانی (دامت برکاتہ) کا حضرت حجۃ الاسلام و المسلمین آقای رئیسی کے نام مبارک کا پیغام

توحید خالص اور اسلام ناب محمدی شیعہ کے ذریعہ دنیا تک پہنچتی ہے ، وہابیت کفار اور مشرکین کا اول دستہ ہے ،

مزید
آئمہ بقیع(ع) کے بارگاہ ملکوتی  کے اسفناک اور فاجعہ بار تخریب کے  دن کی مناسبت سے   حضرت آیت اللہ جواد  فاضل لنکرانی( دام عزہ) کاخطاب

مجموعہ دروس

تالیفات

  • حریم قرآن کا دفاع
    حریم قرآن کا دفاع
کتاب کا تعارف
حریم قرآن کا دفاع
حریم قرآن کا دفاع
کتاب کی فہرست

تحریف قرآن ایک ایسا موضوع ہے جسے قرآن کریم پر ایمان رکھنے ولا کوئی شخص قبول نہیں کر سکتا کیونکہ قرآن کریم اس کی اجازت نہیں دیتا، تحریف یعنی کمی و بیشی تو بہت دور کی بات ہے اس میں کسی شک کی گنجائش بھی نہیں ، خدا کا وعدہ ہے :'' إِنَّا نَحْنُ نَزَّلْنَا الذِّكْرَ وَ إِنَّا لَهُ لَحافِظُون‏'' ہم نے ہی قرآن کو نازل کیا ہے اور ہم ہی اس کی حفاظت کرنے والے ہیں

خصوصی مطالب

 امام صادق امام باقر سے اور امام باقر ، امام سجاد سے اور امام سجاد امام حسین بن علی سے اور امام حسین ،امام حسن سے اور امام حسن امیرالمومنین سے اور امیر المومنین علیہم السلام ،رسول اکرم صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم سے نقل کرتے ہیں کہ آنحضرت صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے فرمایا: «خُلِقَ نُورُ فَاطِمَةَ(سلام الله علیها) قَبْلَ أَنْ تُخْلَقَ الْأَرْضُ وَ السَّمَاء»حضرت زہرا سلام اللہ علیہا  کی نور زمین اور آسمان کی خلقت سے پہلے خلق ہوئی ہے ، اس سے کیا مراد ہے ؟ مراد یہ ہے کہ اگر حضرت فاطمہ سلام اللہ علیہا  کی نور نہ ہوتی تو نہ کوئی آسمان تھا  نہ کوئی زمین تھی ، اور اگر حضرت فاطمہ سلام اللہ علیہا  کی نور نہ تھی تو نہ کوئی انسان اس دنیا میں تھے اور نہ کوئی جنات ۔

فاطمہ سلام اللہ علیہا  کی حقیقت رسول اکرم صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کی کلمات میں موجود ہے ،ہمیں چاہئے کہ اپنے آپ کو اس حقیقت تک پہنچا دیں ، اگر ہم میں سے ہر ایک  اپنے وجود کی حقیقت کو جاننا  چاہتے ہیں تو جب تک حضرت زہرا سلام اللہ علیہا  کی حقیقت کو درک نہ کرے اگرچہ وہ ہر ایک کی اپنی حیثیت کے مطابق ہو، کسی نتیجہ تک نہیں پہنچ سکيں گے ،فاطمہ شناسی ، خدا شناسی کی علتوں کا سلسلہ ہے ، یہی ہمارا اعتقاد ہےاور یہ اعتقاد بھی قرآن کریم کی آیات اور روایات سے لیا گیا ہے ، ہم جب تک اہلبیت کو نہ پہچانیں ، جب تک فاطمہ سلام اللہ علیہا  ، علی علیہ السلام اور ان کے اولاد کو نہ پہچانيں ،خدا کو پہچان ہی نہیں سکتے ۔

( حضرت صدیقہ طاہرہ سلام اللہ علیہا  کی شخصیت کے بارے میں حضرت آیت اللہ کے بیانات سے ماخوذ)

نرم افزارهای موبایلی